Likhe Jo Khat Tujhe (From "Kanyadaan")

لکھے جو خط تجھے، وہ تیری یاد میں
ہزاروں رنگ کے نظارے بن گئے

لکھے جو خط تجھے، وہ تیری یاد میں
ہزاروں رنگ کے نظارے بن گئے
سویرا جب ہوأ، تو پھول بن گئے
جو رات آئی تو ستارے بن گئے
لکھے جو خط تجھے...

کوئی نغمہ کہیں گونجا
کہا دل نے یہ تُو آئی
کہیں چٹکی کلی کوئی
میں یہ سمجھا تُو شرمائی
کوئی خوشبو کہیں بکھری
لگا یہ زلف لہرائی

لکھے جو خط تجھے، وہ تیری یاد میں
ہزاروں رنگ کے نظارے بن گئے
سویرا جب ہوأ، تو پھول بن گئے
جو رات آئی تو ستارے بن گئے
لکھے جو خط تجھے...

فضا رنگیں، ادا رنگیں
یہ اٹھلانا، یہ شرمانا
یہ انگڑائی، یہ تنہائی
یہ ترسا کر چلے جانا
بنا دے گا نہیں کس کو
جواں جادو یہ دیوانہ

لکھے جو خط تجھے، وہ تیری یاد میں
ہزاروں رنگ کے نظارے بن گئے
سویرا جب ہوأ، تو پھول بن گئے
جو رات آئی تو ستارے بن گئے
لکھے جو خط تجھے...

جہاں تُو ہے، وہاں میں ہوں
میرے دل کی تُو دھڑکن ہے
مسافر میں تُو منزل ہے
میں پیاسہ ہوں، تُو ساون ہے
میری دنیا یہ نظریں ہیں
میری جنت یہ دامن ہے

لکھے جو خط تجھے، وہ تیری یاد میں
ہزاروں رنگ کے نظارے بن گئے
سویرا جب ہوأ، تو پھول بن گئے
جو رات آئی تو ستارے بن گئے
لکھے جو خط تجھے...



Credits
Writer(s): Shankar-jaikishan, Neeraj
Lyrics powered by www.musixmatch.com

Link